ڈیلی نیوز
جشن آزادی مبارک - یوم آزادی کے اس عظیم اور سعید موقعہ پر تمام پاکستانی بھائیوں کو مبارک باد پیش کرتے ہیں اور دُعا گو ہیں کہ اللہ تبارک تعالیٰ ہم سب کوآزادی کی اس نعمت کی قدر کی توفیق عطا فرمائے اور ایک دوسرے کی تکیف کا احساس عطا فرمائے۔۔ آمین۔ثم آمین۔۔۔ منجانب ۔ کمال فرید ملک خادم شہر فریدؒ

Flag Counter

کوٹ مٹھن میں آپ کا استقبال ہے۔

اس با ت کا علم تقریباً ہر شخص کو ہے کہ کو ٹ مٹھن کی بنیا د مٹھن نامی ایک شخص نے رکھی تھی ۔جتو ئی قوم سے تعلق رکھتا تھا اور سیت پور کے ایک قصبہ( یا رے والی )کا رہنے والا تھا ۔اب دیکھنا یہ ہے کہ یا رے والی کا رہنے والا یہ شخص اتنی دور دراز کا سفر طے کر کے کو ت مٹھن کی بنیا د کی بنیا د کیسے رکھتا ہے جب کی ان دنوں ذرائع نقل و حمل کی اتنی قلت تھی کہ آدمی اپنے گھر سے نکلے ہو ئے بمشکل چند میلوں کا سفر طے کر پا تا تھا ۔ چنانچہ اس سوال کا حل تلاش کرنے کے لئے ہمیں تاریخ کے اوراق میں جھا نکنا پڑے گا ۔ اس کے علاوہ مٹھن خا ن کی قومیت کے با رے میں جو الہام کی پایا جا ہے کہ وہ گو پانگ تھا یا جتو ئی ؟ اس معمہ کا حل بھی اس بحث کا حصہ ہے ۔ آئینے تاریخ پر ایک نظر ڈالیں  

مختصر تاریخی جائزہ
ناہٹر لودھی حکومت: 1713ء میں جب کوٹ مٹھن کا قدیم شہر قائم ہوا تو اُس وقت تختِ دہلی پر مُغلو ں کی حکومت تھی جبکہ سیت پُور کی ریاست ناہڑ لودھی خاندان کے قبضے میں تھی۔یہ ریاست تختِ دہلی پر بہلول لودھی کے قبضے کے بعدعمل میں آئی اور اس پر ناہٹر حکمران 1445ء سے حکو مت کرتے چلے آ رہے تھے۔سیت پُور کی یہ ریاست اُوچ سے کشمور تک پھیلی ہوئی تھی ۔کوٹ مٹھن نے بھی اِسی ریاست کی گود میں آنکھ کھولی۔ابتداء میں ریاست کا نظم و نسق چلانے اوراِس میں موجودتمام شہروں اور قصبوں کا آپس میں رابطہ جوڑنے کے لئے ایک سڑک قائم ہوئی جو سیت پُور کو کشمورسے ملاتی تھی۔یہ سڑک دریائے سندھ کے کنارے کنارے آگے بڑھتی تھی۔ 1713ء میں اِسی سڑک کے کنارے کوٹ مٹھن قدیم کا چھوٹا سا قصبہ قائم ہوا۔اُن دنوں دریائے سندھ سیت پُور کے مشرق میں بہتا تھا ۔ اِس لیئے سیت پُورسے کوٹ مٹھن کا فاصلہ بُہت کم تھا۔اِس عام گزرگاہ کی وجہ سے کوٹ مٹھن میں مُختلف لوگوں کی آباد کاری میں تیزی کے ساتھ اِضافہ ہوا۔ اُس زمانے میں امُورِسلطنت میں عدم دلچسپی اور باہمی ناچاقی کی بِناء پر ناہڑ حکومت زوال پذیر ہونا شُروع ہو گئی تھی۔بالآخرمُحمد خان ناہڑ کے تین لڑکوں طاہر خان،اسلام خان اور قاسم خان نے اِس ریاست کو آپس میں تقسیم کر لیا۔( حوالہ نمبر۱:سجاد حیدر پرویز ، تاریخِ مظفر گڑھ صف ۵۴) طاہر خان کے حصہ میں سِیت پُور،اسلام خان کے حصے میں بھاگسراور قاسم خان کے حصہ میں کِن اور کشمور کے علاقے آئے۔اسلام خان کے حصہ میں آنے والی بھاگسر کی حکومت میں کوٹ مٹھن اور رُوجھان بھی شامل تھے۔ اِس حکومت کا صدر مقام بھاگسر تھا۔ جہاں کبھی کبھاراسلام خان رہائش پذیر ہوتا تھا۔اسلام خان اِنتہا درجہ کا سادہ لوح تھا اور اپنی اِس سادگی کی وجہ سے علاقہ میں "بھولا بادشاہ" مشہورتھا۔ (حوالہ نمر ۲: غلام علی نتکانی مرقع ڈیرہ غازیخان صف ۹۰) ایک دفعہ سردیوں کی سخت رات تھی۔جنگل کے گیدڑوں نے بھا گسر کے قریب آکرچلانا شروع کر دیا۔اسلام خان نے حیرت سے پوچھا گیدڑکیوں چیخ رہے ہیں؟ مُصاحبوں میں سے ایک نے کہا سخت سردی کے مارے گیدڑگرم کپڑے اور رضائیاں مانگ رہے ہیں۔اِس پر اسلام خان نے کافی رقم اپنے مُصاحِبوں کے حوالے کر دی تاکہ گیدڑوں کی حاجت پوری ہو ۔ وہ رات کٹ گئی تو حسبِ معمول دوسری رات گیدڑوں نے پھر چیخنا چِلانا شُروع کردیا۔اب اسلام خان نے شور سُنا تو کہا کہ گیدڑ آج کیوں شور مچا رہے ہیں ۔مُصاحبین نے ایک زُبان ہو کر جواب دیا کہ حضورِوالا گیدڑ آج آپ کا شُکریہ ادا کرنے کے لئیے آئے ہیں۔یہ سُن کر اسلام خان بہت خوش ہوا۔

 
   

کو ٹ مٹھن جدید ۔ محلِ وقوع :۔کوٹ مٹھن پنجاب کے جنوبی ضلع راجن پور کا ایک چھوٹا سا شہر ہے اور تحصیل راجن پور میں واقع ہے ۔یہ شہر ضلعی ہیڈ کوارٹر سے تقریباَ 16کلو میٹر دور جنوب میں واقع ہے۔یہ شہر ارض بلد29 اور 30 ( شمال) اور طول بلد70 اور71( مشرق ) کے درمیان واقع ہے ۔کوٹ مٹھن کے شمال میں" مین روڈ" پر کوٹلہ نصیر کا بڑاقصبہ آباد ہے ۔ جنوب میں بستی میانی اور کوٹلہ حُسین کی چھوٹی چھوٹی بستیاں ہیں اور اِن سے آگے دریائے سندھ بہتا ہے۔مشرق میں بستی مُحب علی اور اس کے آگے دریائے سندھ کا بہاو ہے۔ کوٹ مٹھن کے مغرب میں بستی پھلی اور بستی دھینگن واقع ہے ۔
سطح سمندر سے بُلندی :۔ کوٹ مٹھن کا موجودہ شہر سطحِ سمندر سے تقریبا 296فٹ بلندی پر واقع ہے۔( ۱ ؂ ضلعی گزٹیئر ڈیرہ غازی خان 84۔1883 ص 2)
سطح :۔  کوٹ مٹھن کے جنوب اور مشرق میں دریائے سندھ بہتا ہے اِس لیے کوٹ مٹھن کا شمار دریائی علاقوں میں ہوتا ہے ۔اِس بنیاد پر اس کی سطح زیادہ تر ریتلی ہے ۔گرمی میں دریا کے طغیانی سے ہر سال سیلاب کا اندیشہ بھی رہتا ہے ۔
آب و ہوا  :۔  آب وہوا کے اعتبار سے یہ شہرگو اتنا زیادہ اہم نہیں ۔ البتہ دریائی کنارے پر واقع ہونے کی وجہ سے رات کو قدرے زیادہ ٹھنڈک ہوتی ہے ۔ بحیثیت مجموعی اِس علاقے کی آب و ہوا مُعتدل ہے اور کسی حد تک گرم مرطوب ہے ۔
موسم:  یہاں پر موسم زیادہ تر خُشک رہتا ہے۔شاید یہی وجہ ہے کہ گرمیوں میں یہاں سخت گرمیپڑتی ہے۔سردیوں کے موسم میں بھی زیادہ سردی نہیں پڑتی البتہ چند راتیں ایسی آتی ہیں جب درجہ حرارت نُقطہء انجماد سے نیچے چلا جاتا ہے۔بارشوں کا سلسلہ بہت کم رہتا ہے۔
 فرید مائنر :   فرید مائنر کوٹ مٹھن کے شُمال میں شرقًا غرباً بہتا ہے1983میں اس کو " قادرہ نہر " سے نکالا گیا ۔ سرکاری ریکارڈ میں اس مائنر کی چوڑائی 3فٹ 8 انچ اور گہرائی ایک فٹ درج ہے۔ یہ نالہ کوٹ مٹھن میں زیادہ تر موضع رکھ کوٹ مٹھن کا رقبہ سیراب کرتا ہے۔

فخرِ مائنر :   اس مائنر کی کھدوائی بھی "فرید مائنر " کے ساتھ عمل میں آئی ۔ یہ مائنر کوٹ مٹھن کے مشرق میں شُمالًا جنوباً بہتا ہے ۔ اس سے کوٹ مٹھن کا بہت کم رقبہ سیراب ہوتا ہے۔ البتہ اس کی شرقی بند بڑی مضبوط اور کافی اُونچی ہے۔ جو شہر کے بچاؤ کے لئے سیلاب کی روک تھام کا کام سر انجام دیتی ہے۔
نہریں:۔
 نالہ قاضی :  قاضی نور مُحمد کوریجہ نے1791 میں ونگ کے شمال مشرق میں دریائے سندھ سے ایک نالہ کھدوایا تھا جو ونگ سے گزرتا ہوا بستی مُحب علی اور موجودہ شہر کوٹ مٹھن کے درمیان سے گزر کر کوٹ مٹھن قدیم کی طرف بڑھ جاتا تھا۔ چند سالوں کے بعد جب اس نالہ کے ٹھیکہ میں قاضی نور محمد کو نقصان پہنچا تو اُنہوں نے اسے بند کرا دیا ۔ لیکن بعد میں کئی سالوں تک یہ نالہ دریا کی طغیانی کے باعث پانی سے بھر جاتا رہا۔
سردیوں کے موسم میں دریا کے کنارے انجن کے ذریعے پانی کھینچ کر فصلوں کو سیراب کیا جاتا ہے۔ گرمیوں میں ہر سال دریا کا پانی شہر کے قریب قریب پہنچ جاتا ہے۔اس  کے خطرات سے شہر کو محفوط رکھنے کے لئے فخر فلڈ بند کی تعمیر کرائی گئی ہے۔
   اب تقریباً سو سال سے ویران پڑا ہے البتہ نقشوں میں اس نالہ کی نشاندہی ملتی  ہے۔ک

نویں :۔  کوٹ مٹھن میں زیرِ زمین پانی کی سطح کافی بُلند ہے۔ اس لئے کنویں احداث کرنے کے لئے زمین کو زیادہ گہرائی تک نہیں کھودنا پڑتا تھا۔ تقریباً دس پندرہ فُٹ گہرائی تک پانی نکل آتا تھا۔

 Click here To View / Downlood Diwan - i - Fari d http://www.kotmithan.com/uploads/Dewan-i-Farid.pdf  

kot Mithan, Pakis

tan Page

Other names: Kot Mithan Municipality,Kot Mithan , Mithan kot Sharife

World:Pakistan:Punjab

Latitude

28.9500

Longitude

70.3667

Altitude (feet)

291

Lat (DMS)

28° 56' 60N

Long (DMS)

70° 22' 0E

Altitude (meters)

88

 

Time zone (est)

       

Approximate population for 7 km radius from this point: 18287

 

فرید رنگ

معزز قارئین فرید رنگ میں آپ مشہور  صوفی بزرگ اور روحانی پیشواٗ  حضرت خواجہ غلام فرید ،خاندان فرید، افکار فرید، اذکار فرید،کلام فرید اور دربار فرید کے علاوہ اس سلسلہ میں ہونے والے ثقافتی علاقائی اور ادبی پروگرامز کے بارے میں معلومات حاصل کر سکتے ہئں

  ادارے

قارئین محترم ,کوٹ مٹھن میں موجود تمام تر سرکاری ، پرائیویٹ ، تعلیمی ، ووکیشنل ، تاریخی ، روایتی ، ادبی ، ثقافتی ، روحانی اور تربیتی اداروں کے بارے میں تمام تر تفصیلات حاصل کی جاسکتی ہیں ۔ علاوہ ازیں ان اداروں کی کارکردگی رپورٹ اور نمایا حیثیت کو بھی اُجاگر کیا جائے گا ۔

Nearby Cities and Towns

West

North

East

South

Miani (0.4 nm)
Basti Husain Bhai (1.3 nm)
Basti Naurang (1.5 nm)
Basti Pir Bakhsh (1.6 nm)
Kumharwala (2.4 nm)

Basti Rahim Bakhsh (0.4 nm)
Basti Qayum Khan (1.0 nm)
Muhibb Ali (1.3 nm)
Basti Ellahi Bakhsh Batwani (1.5 nm)
Rahm Shah (2.0 nm)
Basti Khuda Bakhsh (2.1 nm)
Basti Musa Khan (2.2 nm)
Basti Lal Thathal (2.4 nm)
Kotla Rahim (2.6 nm)
Basti Muhammad Buta (2.8 nm)

 

Gulkhani (0.7 nm)
Basti Husain Bakhsh (1.0 nm)
Bhinda (1.6 nm)

 

Nearby Airports

Code

IATA

Kind

Name

City

Distance

Bearing

Airlines

FR4408

 

Small

RAJANPUR

Rajanpur

21 nm N

333

 

OPRK

RYK

Medium

SHEIKH ZAYED

Rahim Yar Khan

34 nm S

187

(one of Pakistan Inter or Riau)

FR4366

 

Small

MAD JUMA

Mad Jamu Kholelan

37 nm S

160

 

OPDG

DEA

Medium

D G KHAN

Dera Ghazi Khan

60 nm N

5

(one of Pakistan Inter or Riau)

Nearby references in Wikipedia:

Distance

Title

0.0 nm

W

Mithankot

7.0 nm

E

Panjnad River

7.3 nm

NW

Asni, Pakistan

21.8 nm

SW

Dera Dildar

فرید رنگ

معزز قارئین فرید رنگ میں آپ مشہور  صوفی بزرگ اور روحانی پیشواٗ  حضرت خواجہ غلام فرید ،خاندان فرید، افکار فرید، اذکار فرید،کلام فرید اور دربار فرید کے علاوہ اس سلسلہ میں ہونے والے ثقافتی علاقائی اور ادبی پروگرامز کے بارے میں معلومات حاصل کر سکتے ہئں۔  

ادارے

قارئین محترم کوٹ مٹھن میں موجود تمام تر سرکاری ، پرائیویٹ ، تعلیمی ، ووکیشنل ، تاریخی ، روایتی ، ادبی ، ثقافتی ، روحانی اور تربیتی اداروں کے بارے میں تمام تر تفصیلات حاصل کی جاسکتی ہیں ۔ علاوہ ازیں ان اداروں کی کارکردگی رپورٹ اور نمایا حیثیت کو بھی اُجاگر کیا جائے گا ۔

تصاویر

آپ یہاں شہر فرید کوٹ مٹھن سے متعلقہ تمام تاریخی ، روحانی ، ثقافتی ، ادبی ، مقامات اور شخصیات کی تصاویر کے علاوہ اہم مواقعوں ، قدرتی آفات ، اہم ثقافتی و ادبی منعقدہ پروگرامز اور سیمینارز اور اہم شخصیات کی آمد پر لی گئی رصاویر کے علاوہ شہر کی اہم اور مدبر شخصیات کی تصاویر کو دیکھ سکتے ہئں ۔

mm